Announcement

Collapse
No announcement yet.

Unconfigured Ad Widget

Collapse

Ghzal

Collapse
X
 
  • Filter
  • Time
  • Show
Clear All
new posts

  • Ghzal

    لٹا وہ شہر کہ مشہور تھا جہاں آباد
    نہ اب دُکانوں پہ رونق نہ اب مکاں آباد

    جو دیکھتا ہوں تو ویراں ہے آرزو کا نگر
    یہاں جو لوگ تھے، آجکل کہاں آباد

    بس اب تو پردے ہیں پردوں کے پیچھے کچھ بھی نہیں
    گُداز چہروں سے رہتی تھیں کھڑکیاں آباد

    لُٹا ہُوا یہ نگر جس کو دل پکارتے ہیں
    اسی خرابے میں ہے یاد رفتگاں آباد

    ہزار رُوپ ہیں اس پیکر تمنا کے
    ہزار شکل سے اک شخص ہے یہاں آباد


    بھری بہار میں کیا کچھ دلں پہ بیت گئی
    خدا کرے نہ رہے صحن گلستاں آباد

    چمک اٹھی تھی کبھی جن کے نور سے دنیا
    وہ لوگ رہ نہ سکے زیر آسماں آباد

    ہمیں قفس میں رھا انتظار آزادی
    نشیمنوں میں ہوئیں آکے بجلیاں آباد

    یہیں رکیں یہیں شہزاد ٹھہر جائیں
    اسی دیار میں ہے حسن دو جہاں آباد
    Last edited by Dr Fausts; 23rd May 2018, 09:26.
    :(

  • #2
    wahhhhhh bht hi umda...!


    Comment


    • #3
      Originally posted by ujalaa View Post
      wahhhhhh bht hi umda...!
      thnk u......
      :(

      Comment

      Working...
      X