Above Post

Collapse

murjha kay kali jheel main

Collapse
X
 
  • Filter
  • Time
  • Show
Clear All
new posts

  • murjha kay kali jheel main



    مرجھا کے کالی جھیل میں گرتے ہوئے بھی دیکھ
    سورج ہوں، میرا رنگ مگر دن ڈھلے بھی دیکھ
    ہر چند راکھ ہو کے بکھرنا ہے راہ میں
    جلتے ہوئے پروں سے اڑا ہوں مجھے بھی دیکھ
    عالم میں جس کی دھوم تھی اس شاہکار پر
    دیمک نے جو لکھے کبھی وہ تبصرے بھی دیکھ
    تو نے کہا نہ تھا کہ میں کشتی پہ بوجھ ہوں
    آنکھوں کو اب نہ ڈھانپ مجھے ڈوبتے بھی دیکھ
    بچھتی تھیں جس کی راہ میں پھولوں کی چادریں
    اب اس کی خاک گھاس کے پیروں تلے بھی دیکھ
    کیا شاخ باثمر ہے جو تکتا ہے فرش کو
    نظریں اٹھا شکیبؔ کبھی سامنے بھی دیکھ
    شکیب جلالی
    اللھم صلی علٰی محمد وعلٰی آل محمد کما صلیت علٰی ابراھیم وعلٰی آل ابراھیم انک حمید مجید۔
    اللھم بارک علٰی محمد وعلٰی آل محمد کما بارکت علٰی ابراھیم وعلٰی آل ابراھیم انک حمید مجید۔

Below Post Add

Collapse
Working...
X