Above Post

Collapse

کبھی تو یہ ان کہی بھی ہو گی

Collapse
X
 
  • Filter
  • Time
  • Show
Clear All
new posts

  • کبھی تو یہ ان کہی بھی ہو گی

    یہ زندگی، زندگی بھی ہو گی
    کبھی تو یہ ان کہی بھی ہو گی

    ہے عمر پر جو محیط میری
    یہ رات پھر اجنبی بھی ہو گی
    ملے گا منزل کا بھی نشاں اب
    تو راہ میں روشنی بھی ہو گی
    کسی کو میرا خیال ہو گا
    کسی کی جاں پر بنی بھی ہو گی
    کبھی محبت سے ہم ملیں گے
    کہ نفرتوں میں کمی بھی ہو گی
    یہ جیسے ہم کو تری کمی ہے
    تمہیں ہماری کمی بھی ہو گی
    جو لے گا ہنس کے وہ نام میرا
    تو آنکھ میں کچھ نمی بھی ہو گی
    ہے مشترک یہ جو غم ہمارا
    کبھی تو یکجا خوشی بھی ہو گی
    کبھی تو ابرک، ترے لکھے میں
    بہار سی دل کشی بھی ہو گی



  • #2
    bhat khoob
    :(

    Comment


    • #3
      khubsoort poetry..very nice

      Comment

      Below Post Add

      Collapse
      Working...
      X